شمالی وزیرستان میرعلی میں دن دیہاڑے معصوم طالبعلم کو اغوا کرلیا، طلبانے مغوی بچے کو بحفاظت بازیابی کیلئے 24 گھنٹے کی ڈیڈلائن دیدی

میرانشاہ ( دی خیبرٹائمز ڈسٹرکٹ ڈیسک ) شمالی وزیرستان کے میرعلی سب ڈویژن سے گذشتہ روز نامعلوم افراد نے نجی سکول کے گیارہ سالہ طالب علم کو اغوا کرلیا جس کے خلاف سکول کے طلباء نے احتجاج شروع کردیا ہے۔ مقامی ذرائع کے مطابق میرعلی کے خدی گاؤں سے تعلق رکھنے والے نذیر اللہ ولد شاہد اللہ نامی گیارہ سالہ طالب علم کو اس وقت نامعلوم کار سواروں نے اغوا کرلیا جب وہ سکول سے چھُٹی کرکے گھر واپس ارہے تھے۔ طالب علم کے اغوا کی خبر پھیلتے ہی خدی گاؤں کے مکینوں نے اغواکاروں کو پکڑنے اور مغوی طالب علم کی بازیابی کیلئے چیغہ پارٹی تشکیل دی اور اغواکاروں کا پیچھا کیا تاہم انہیں کامیابی نہیں ملی۔ واقعہ کے خلاف مین میرعلی میرانشاہ روڈ پر واقع نجی سکول کے طلباء نے اپنے ساتھی کی بازیابی کیلئے احتجاجی مظاہرہ کیا اور دھمکی دی کہ اگر کل تک مغوی طالب علم کو بازیاب نہیں کرایا گیا تو مین روڈ کو ہر قسم کی ٹریفک کیلئے تب تک بند کرینگے جب تک مغوی طالب علم بحفاظت بازیاب نہ ہو جائے۔ دریں اثنا ء طالب علم کی اسی انداز میں اغوا پر عوامی حلقوں اور سول سوسائیٹی کے اراکین نے بھی شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اغواکاروں کو قانون کی گرفت میں لایا جائے اور سکول و کالجز کے طلباء کو تحفظ فراہم کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں