پشاور پریس کلب کے پلاٹوں سے محروم صحافی ممبران کا احتجاجی مظاہرہ

پشاور ( پ ر ) پشاور پریس کلب میں آج پلاٹس سے محروم پریس کلب ممبران کااجلاس منعقد ہوا جسمیں پلاٹس سے محروم پشاور پریس کلب کے ممبران نے بڑی تعداد میں شرکت کی،اس موقع پر پلاٹس سے محروم ممبران نے حکومت کی جانب سے ممبران کے لئے نئی کالونی کے اعلانات کے باوجود عملی اقدامات نہ اٹھانے پر تشویش کا اظہار کیا ، اجلاس میں شرکاء کاکہنا تھا کہ 13سالوں سے درانی میڈیا کالونی پر سیاست ہو رہی ہے جبکہ پلاٹس سے محروم ممبران کے لئے کوئی ٹھوس اقدامات نہیں اٹھائے جارہے ہیں جو نہایت ہی مایوس کن بات ہے اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ کلب کابینہ کی جانب سے غیر سنجیدگی دکھانے کی صورت میں انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کو لیٹر لکھا جائے گا جسمیں 2010سے لے کر 2020تک ملنے والی گرانٹ کاآڈٹ کرانے کا مطالبہ کیا جائے گا ،اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ درانی میڈیا کالونی کو 500ممبران کے نام پر فنڈزمل رہے ہیں جبکہ وہاں پر زیادہ تر پلاٹس پرائیویٹ بندوں کے ہیں اس لئے پرائیویٹ بندوں کے لئے صحافیوں کا پیسہ استعمال کرنا سراسر ناانصافی ہے ،اجلاس میں چند عناصر کی جانب سے آج سی ایم کیساتھ ہونے والے میٹنگ کو کینسل کرنے کے لئے اثرو رسوخ استعمال کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے فیصلہ کیا گیا کہ ایسے عناصر کو بے نقاب کرنا ہم سب کی ذمہ داری ہے اور بہت جلد ان عناصر کا پتہ لگایا جائے گا جو پلاٹس سے محروم ساتھیوں کے راستے میں رکاوٹیں ڈالنے کی کوششیں کر رہے ہیں ۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پلاٹس کے حصول کے لٸے وزیراعلی ہاوس کے سامنے بھی احتجاجی مظاہرہ عنقریب کیا جاٸے گا ۔اگر حکومت تمام ممبران کو پلاٹس نہیں دے سکتی تو درانی میذیا کالونی کو وسعت دے کر پلاٹس سے محروم ممبران کو اس میں ایڈجسٹ کیا جاٸے اور مذکورہ معاملہ کو حکومت کے ساتھ زیر بحث لانے پر بھی اتفاق کیا گیا ۔بعد میں پلاٹس سے محروم ساتھیوں نے کلب لان میں احتجاجی مظاہرہ بھی کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں